خطہ ایک اور جنگ کے دہانے پر - Public News - Justwatch.pk

خطہ ایک اور جنگ کے دہانے پر

خطہ ایک اور جنگ کے دہانے پر

 

 

قارئین جیسا کہ آپکو معلوم ہے کہ 29 فروری طالبان اور امریکی انتظامیہ کے درمیان امن معاہدہ ہوا تھا۔ معاہدہ کی وجہ سے طالبان نے جنگ بندی کا اعلان کیا تھا۔

 

چونکہ امریکہ میں نئے صدر اپنا حلف اٹھا چکے ہیں اور امریکی صدر نے اعلان کیا ہے کہ ٹرمپ انتظامیہ نے طالبان کے ساتھ جو معاہدہ کیا تھا اس کا دوبارہ از سرنو جائزہ لیا جائے گا۔ اور دوسری طرف طالبان نے جوبائیڈن انتظامیہ پر واضع کر دیا ہے کہ اگر یکم مئی تک افغانستان سے غیرملکی افواج کا انخلاء نہ ہوا تو ایک ہلاکت خیز جنگ کا آغاز کردیا جائے گا۔

 

ٹرمپ انتظامیہ نے طالبان کے باہمی شرائط پر ایک معاہدہ تحریر کیا تھا جس کے نتیجے میں افغان طالبان جنگ بندی پر راضی ہوئے تھے۔ ٹرمپ انتظامیہ کی کوشش تھی کہ ایک لاحاصل جنگ کو ختم کردیا جائے۔

 

اور اسی معاہدے کے تحت جلد از جلد غیر ملکی افواج کا افغانستان سے انخلاء معاہدے کا ایک اہم حصہ تھا۔ لیکن جوبائیڈن انتظامیہ مختلف حیلے بہانے کرکے معاہدے کو ختم کرنا چاہ رہی ہے۔ اور اسی سلسلے میں نیٹو بھی یہ کہہ چکا ہے کہ ہم افغانستان سے کہیں نہیں جا رہے۔

 

یاد رہے کہ اگر معاہدہ ختم ہوتا ہے تو افغان طالبان دوبارہ غیر ملکی افواج اور تنصیبات کو نشانہ بنا سکتے ہیں اور خطہ میں دوبارہ ایک نئی جنگ کا آغاز ہوجائے گا۔ جو کہ پاکستان اور دوسرے ہمسایہ ممالک کیلئے بہت مسائل کھڑے کرے گا۔

 

پاکستان نے افغان طالبان اور ٹرمپ انتظامیہ کے درمیان ایک اہم فریق کا کردار نبھایا تھا اور افغان طالبان نے اسلام آباد کا دورہ بھی کیا تھا۔

کوئی تبصرے نہیں: